ایرانی کرنسی کی تاریخی بے قدری، ایک ڈالر کتنے لاکھ ایرانی ریال کا ہو گیا؟ نئی پابندیاں لگ گئیں

پی این آئی کے یوٹیوب چینل کو سبسکرائب کریں ۔

تہران (پی این آئی) مظاہرین پر حکومت کے وحشیانہ کریک ڈاؤن پر 37 ایرانی عہدیداروں اور تنظیموں پر نئی پابندیاں عائد کرنے کے لیے یورپی ممالک میں بحث کے دوران ہفتے کے روز ایران کی کرنسی امریکی ڈالر کے مقابلے میں ریکارڈ کم ترین سطح پر آ گئی۔یورپی یونین اور تہران کے درمیان تعلقات حالیہ مہینوں میں خراب ہوئے ہیں کیونکہ جوہری مذاکرات کی بحالی کی کوششیں تعطل کا شکار ہیں۔

ایران نے متعدد یورپی شہریوں کو حراست میں لیا ہے اور بلاک مظاہرین کے ساتھ پرتشدد سلوک اور پھانسیوں کے استعمال پر سخت تنقید کا نشانہ بنا ہے۔ یورپی یونین بلاک کے وزرائے خارجہ پیر کو برسلز میں پہلے سے طے شدہ اجلاس میں تہران کے مظاہرین پر جبر کے خلاف پابندیوں کے چوتھے پیکج کو اپنانے پر رضامند ہونے والے ہیں۔فارن ایکسچینج سائٹ Bonbast.com کے مطابق ہفتے کے روز ایران کی غیر سرکاری مارکیٹ میں ڈالر 447,000 ریال تک فروخت ہو رہا تھا، جو گزشتہ روز 430,500 کا تھا۔ ملک گیر احتجاج شروع ہونے کے بعد سے ایرانی ریال اپنی قدر کا 29 فیصد کھو چکا ہے۔

close