خام تیل کی قیمتیں 6 ماہ کی کم ترین سطح پر آ گئیں، بڑی خوشخبری

نیویارک (پی این آئی) عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتیں 6 ماہ کی کم ترین سطح پر آ گئیں، برطانوی خام تیل کی فی بیرل قیمت 93 ڈالرز جبکہ امریکی خام تیل کی فی بیرل قیمت 88 ڈالرز کی سطح کر گر گئی۔ تفصیلات کے مطابق عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔

 

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بین الاقوامی مارکیٹ میں امریکی خام تیل ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ کی قیمت 88 ڈالر فی بیرل پر آگئی ہے۔روس یوکرین جنگ کے آغاز کے بعد سے یہ امریکی خام تیل کی کم ترین قیمت ہے۔خیال رہے کہ 24 فروری 2022 کو روس نے یوکرین پر حملہ کردیا تھا جس کے بعد عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتیں تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں تھیں تاہم اب ان میں کمی آنا شروع ہوگئی ہے، برطانوی خام تیل برینٹ کی قیمت میں بھی 2.88 ڈالر کمی ہوئی جس کے بعد وہ 93.90 ڈالر فی بیرل پر آگیا۔امریکی خام تیل کی قیمت 2.37 ڈالر کمی کے بعد 88.29 ڈالر پر فروخت ہوا۔یہ برینٹ کی 21 فروری 2022 اور امریکی خام تیل کی 3 فروری 2022 کے بعد سے اب تک کی کم ترین قیمت ہے۔ دوسری جانب تیل پیدا کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک پلس نے خام تیل کی یومیہ پیداوار میں ایک لاکھ بیرل اضافہ کرنے پر اتفاق کرلیا ہے۔ یورو ایشیا گروپ کے توانائی اور کلائیمیٹ کے منیجنگ ڈائریکٹر رعد القدیری نے اوپیک پلس کی جانب سے خام تیل کی پیداوار میں معمولی اضافے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ اضافہ انتہائی کم ہے جو بالکل بے معنی ہے اور مادی لحاظ سے یہ ایک معمولی اضافہ ہے۔

 

وائٹ ہاؤس کے مشیر برائے توانائی اموس ہوچسٹن نے کہا ہے کہ امریکا تیل کی عالمی مارکیٹ کو مانیٹر کرے گا تاکہ پتہ چلے کہ یہ اضافہ کافی ہے کہ نہیں۔تاہم امریک اوپیک کے رکن ممالک سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات پر تیل کی پیداوار میں اضافے کے لیے دباؤ ڈال رہا ہے۔ اوپیک پلس کا اجلاس ایک ایسے وقت میں ہوا جب امریکا کی جانب سے تیل پیدا کرنے والے ممالک پر زور دیا جارہا ہے کہ وہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں کمی کے لیے پیداوار میں اضافہ کریں۔اوپیکس پلس کے فیصلے کا مطلب ہے کہ 23 ممالک اگلے ماہ تک خام تیل کی یومیہ پیدوار 7 لاکھ 48 ہزار بیرل تک بڑھائیں گے۔