پولٹری فارم کے قریب بینڈ باجے کا شور، 63 مرغیاں ہارٹ اٹیک سے مر گئیں، پولیس کیس بن گیا

نئی دہلی (پی این آئی) ہمسایہ ملک بھارت میں ایک پولٹری فارم کے مالک نے دعویٰ کیا ہے کہ ایک شادی میں بجنے والے تیز میوزک، ڈھول باجے اور آتش بازی کی وجہ سے اس کی 63 مرغیاں مر گئیں۔ یورپی خبر رساں ادارے کے مطابق رنجیت کمار کا کہنا ہے ث اتوار کی رات ان کے پولٹری فارم کے قریب سے گزرتے ہوئے بارات میں کانوں کو پھاڑ دینے والا میوزک بجایا جا رہا تھا۔

اس نے بینڈ والوں سے کہا کہ میوزک کی آواز کم کریں کیونکہ مرغیاں ڈر رہی تھیں، لیکن انہوں نے میری ایک نہیں سنی، اس حوالے سے جانوروں کے ڈاکٹر نے رنجیت کمار کو بتایا کہ مرغیوں کی موت ہارٹ اٹیک سے ہوئی جس کے بعد انہوں نے شادی کے منتظمین سے ہرجانے کا مطالبہ کیا اور ایسا نہ کرنے پر پولیس کو درخواست دے دی۔زولوجی کے پروفیسر سوریا کانتا مشرا نے بھارتی میڈیا کو بتایا کہ تیز میوزک سے پرندوں میں دل کی بیماری کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

مرغیوں کا نظام ایسا ہے کہ میوزک سے پیدا ہونے والے اچانک سٹریس سے ان کا بائیولوجیکل کلاک متاثر ہوتا ہے۔ تاہم 63 مرغیوں کی موت پر پولیس کو کارروائی کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئی کیونکہ فریقین نے مل بیٹھ کر معاملہ طے کرنے کا فیصلہ کرلیا۔
پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پولٹری فارم کے مالک نے درخواست واپس لے لی ہے۔۔۔۔۔