چترال کو صاف ستھرا رکھنے کیلئے ٹی ایم اے کے عملہ کی طرف سے مویشی منڈیوں میں جلدی حتم ہونے والے بیگ مفت تقسیم


چترال(گل حماد فاروقی) چترال شہر اور مضافات کو صاف ستھرا رکھنے کیلئے تحصیل میونسپل انتظامیہ نے محتلف مویشی منڈیوں میں جلدی حتم ہونے والے Biodegratable تھیلے تقسیم کئے۔
اس موقع پر تاجر یونین کے صدر شبیر احمد بھی موجود تھے جبکہ تحصیل میونسپل انتظامیہ کے تحصیل

آفیسر ریگولیشن رحمت ولی بھی موجود تھے۔ ٹی ایم اے چترال نے سب سے پہلت دنین میں واقع سرکاری طور پر منعقد شدہ مویشی منڈی میں یہ تھیلے تقسیم کئے جہاں مال مویشیوں کیلئے پانی کا ٹینکی، عوام کیلئے بھی پانی کا ٹینکی، صابن اور سینٹائزر رکھا ہوا تھا۔ ایک مقامی تاجر نے کہا کہ ٹی ایم اے نے ان کیلئے اچھی بندوبست کی ہے کہ ان کیلئے اور مال مویشی کیلئے بھی پانی کا انتظام کیا ہوا ہے تاہم اس کے عوض ہم ٹی ایم اے کو سو روپے ٹیکس دے رہے ہیں۔ تاجر یونین کے صدر شبیر احمد نے بھی ٹی ایم اے کا یہ اقدام نہایت سراہا کہ وہ مویشی منڈیوں میں تمام تاجروں کو یہ جلدی حتم ہونے والے تھیلے مفت تقسیم کررہے ہیں جو قربانی کے جانور کے خریدار کو اس ہدایات کے ساتھ دی جاتی ہے کہ قربانی کرنے کے بعد جانوروں کی آلائش کو ادھر اُدھر نہ پھینکے بلکہ ان تھیلوں میں رکھ کر ایک مخصوص مقام پر رکھے جن کو ٹی ایم اے کا عملہ گاڑی لاکر اٹھائے گا اور اسے ٹھکانے لگائے گا تاکہ شہر میں گندگی نہ پھیلے۔ ٹی ایم اے کا عملہ بلچ کے مقام پر محتلف نجی طور پر منعقد ہونے والے چھوٹے چھوٹے مویشی منڈیوں میں بھی گئے اور وہاں بھی لوگوں میں یہ بائیو ڈیگریٹ ایبل تھیلے مفت تقسیم کئے۔ واضح رہے کہ ٹی ایم اے کا عملہ یہ تھیلے اس لئے استعمال کررہے ہیں کہ پلاسٹک کے شاپنگ بیگ پر پابندی لگائی گئی ہے کیونکہ پلاسٹک کے بیگ جلدی حتم نہ ہونے کی وجہ سے اکثر ماحولیات کو حراب کرنے کا باعث بنتا ہے اور نالیوں میں پھنس کر پانی بھی روکتا ہے جو اکثر سڑکوں پر بہتا نظر آتا ہے۔ پی آئی اے چوک میں ہلال احمر سے ہاتھ دھونے کیلئے رکھی ہوئی پانی کی ٹینکی کئی دنوں سے حالی پڑا تھا۔ تاجر یونین کے صدر یہ بات متعلقہ حکام کے نوٹس میں لائے جس پر ٹی ایم اے کی واٹر ٹینکر نے اس میں پانی بھر دیا تاکہ بازار آنے والے لوگ یہاں ہاتھ دھوئیے اور کرونا وائریس کے ممکنہ خطرے سے بچ سکیں ۔۔۔۔



اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں