انسانیت کی تعلیم، تحریر: جویریہ فہد، برطانیہ


کہیں بھی ناانصافی ہر جگہ انصاف کوخطرہ ہے ،” یہی بات میں ایک فرد کی حیثیت سے مانتی ہوں اور یہی بات مجھے معاشرے کےگزرتے ہوئے عالمی بحران اور غیر اخلاقی اصولوں کے بارے میں اپنی آراء اور نظریات کو سامنے لانے اور اس طرح کے بارےمیں لاعلمی سے آگاہ کرنے کی ترغیب دیتی ہے۔

بطور شہری ان کے حقوق اور ذمہ داریاں۔
یہ ضروری ہے کہ اس دور میں ہمارا معاشرہ بیداری کی کمی سے نہ صرف ہماری قوم کی ترقی بلکہ مضبوط خود مختار افراد کی حیثیت سےہماری افزائش پر بھی واقف ہے۔
بیداری پھیلانے اور خود کو تعلیم دینے کے لیئے اور جو ہم سے کم مراعات یافتہ ہیں ، میں نے نوجوانوں سے چلنے والی ایک تنظیم تشکیل دی ہے ، جس کا نام Writing By Javiaia ہے ، جس کا مقصد ان تمام افراد کی مدد کرنا ہے جو خاموش رہ چکے ہیں ، ان لوگوں کی مدد کریں جو ہمارے موٹو کو انسانیت سے آگاہی فراہم کریں۔
جب سے میں نے شروع کیا ہے صرف دو ماہ کے قلیل عرصے میں میں بہت ساری مقامی اور بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ اس امید پر اشتراک کیا ہے کہ ہماری آوازیں ہمارا معاشرہ بدلیںگی کیونکہ ہم خاموش رہنے سے انکار کرتے ہیں جب کہ ہمارے نوجوانوںکو ناخواندگی اور آگاہی کی کمی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
نوجوانوں کا مستقبل ہے اور اس لئے یہ ضروری ہے کہ ہمیں آگاہ کیا جائے تاکہ ہم اپنے معاشرے کے غیر اخلاقی اصولوں کےخاتمے کی طرف کام شروع کرسکیں:
صنفی رکاوٹوں کو ختم کرنے اور ساتھ ہی ساتھ لوگوں کو ان کے حقوق اور ذمہ داریوں سےآگاہ کریں۔
میں افراد کو بتاناچاہتی ہوں کہ وہ اپنے حقوق کے لئے بات کریں ، ظلم و بربریت کے خلاف بات کریں اور ان کے ساتھیوں کےلئے بات کریں۔ عمر آپ کو خاموش نہ ہونے دیں ، اور صنفی رنگ کی ذات یا مسلک کی بنیاد پر معاشرے کو آپ سے امتیاز برتنے نہ دیں۔
ہماری نوجوانوں کے زیر انتظام تنظیم کا مقصد قائم کرنے کے بعد ، میں ان تمام باصلاحیت افراد کے لئے خیرمقدم کا ہاتھ تھامناچاہتی ہوں جو معاشرے کے دباؤ کی وجہ سے خاموش ہو گئےہیں تاکہ وہ ہماری تنظیم سے رابطے میں آئیں تاکہ وہ اپنے تحفظات کااظہار کرسکیں۔
یہ ضروری ہے کہ اس دن اور اس دور میں ہم پاکستان کی اگلی نسل کی حیثیت سے اپنی قوم کو اخلاقی مدد فراہم کرنے کی سخت ضرورت کو محسوس کرتے ہیں اور اب وقت آگیا ہے کہ ہم ناگوار ہماری قوم کا اتنا ہی حصہ ہیں جتنا ہم ہیں۔
ہر فرد عطیہ کرکے ، درخواستوں پر دستخط کرکے اور ایسی نوجوان تنظیموں کی مدد کرکے اپنی قوم کی بہتری کے لئے اخلاقی مدد کا مظاہر ہ کرسکتا ہے۔
میں مستقبل میں بنی نوع انسان کی بہتری کے لئے ہاتھوں میں ہاتھ دینے کی منتظر ہوں اور ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتی ہوں جنہوںنے اس سفر میں میری مدد کی۔ لیکن ابھی ہم اپنی منزل سے بہت دور ہیں۔ بہت کچھ حاصل کرنے کے باوجود یہ بات ذہن میں رکھنی چاہیےکہ مسلمانوں پر بربریت ، پولیس کی بربریت ، نسل پرستی اور بچوں کی مزدوری اب بھی ہمارے معاشرے کا ایک نمایاں حصہ ہیںاور مل کر ہم اپنے معاشرے سے ان کو ختم کرنے میں مدد کرسکتے ہیں۔۔۔۔
(برطانیہ میں مقیم جویریہ فہد شعبہ قانون کی طالب علم اور انسانی حقوق کےلیے سرگرم نوجوان شخصیت ہیں، ان کی تنظیم Writings by Javeria کا ماٹو ہے کہ دنیا کے 09 فیصد مسائل کی وجہ ناخواندگی اور آگہی میں کمی ہے،اس لیے آگہی کا فروغ ان کا ہدف ہے)



اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں